سَنّا ٹے

image

چھَلنی دِل سے بڑی ٹِیس اُٹھتی ہے

نادان دھڑکن آہستہ آہستہ رُکتی ہے

بے زار سفرِخیال کی جانِب بڑھتے ہوُۓ

ایک سُنسا ن کھَنڈر کی طرف راہ مُڑتی ہے

شور برپا ہے خاموشیوں کے ڈھیر تلے

دبے آنسوؤں کے قا فلے میں رات ڈھلتی ہے

سُنہری بادل میں لِپٹی تقدیر ہو جیسے

ما تھے پہ مہتاب بن کے چمکتی ہے

رُوکھی رُوح کے گھنے جالے ہیں چار سُو

خالی مکاں کے  جھرونکے سے آرزو ٹپکتی ہے

2 thoughts on “سَنّا ٹے

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s