آئینہِ صنم

image

پسِ آئینہ عکسِ یار نظر آتا ہے

اپنا آپ مجھے دِلدار نظر آتا ہے

میں کون ہُوں یہ ذات اِک پہیلی ہے

ہاتھ کی لکیروں میں اُس کا نام نظر آتا ہے

مُجھ سے ذیادہ وہ مُجھ میں شامِل ہے

قطرہِ خوُن بھی اب انجان نظر آتا ہے

چَمکتے رہو تُم میری سَر ذمین پر

اِس آنچل کو بس سِتاروں کا پتہ آتا ہے

ہر لمحہ اب دھڑکنیں سُنائ دیتی ہیں

میرے دِل پہ تیرا پیغامِ قیام آتا ہے

جانِ شمعٰ پہ ہے سَلطنت تیری صنم

میری رُوح کے تُو آر پار نظر آتا ہے

One thought on “آئینہِ صنم

Leave a Reply to Maqbool Cancel reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s