جہاں تیرا ذِکر نہیں

image

کھو جاتے ہیں خیالِ سفر میں اجنبی بن کے یُوں

نہ بُلاؤ اُن رونقوں میں جہاں میرے مِحبوب کا ذِکر نہ ہو

احساسِ راحت سے ہیں میری تنہائی کے راز درخشاں

نہ دھکیلو اُن محفلوں میں جہاں میرے مِحبوب کا ذِکر نہ ہو

پابندئیِ اظہار ہو تو حریفِ وفا خوشیاں سمیٹتے نظر آئیں

نہ لے جاؤ اُن شاموں میں جہاں میرے مِحبوب کا ذِکر نہ ہو

طوِیل ہیں گھڑیاں جنہیں بے آسرا کرتے ہیں بے خبر دل

نہ جلاؤ اُن اُجالوں میں جہاں میرے مِحبوب کا ذِکر نہ ہو

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s