….اپنا آپ نظر نہیں آتا

image

دل میں اُٹھتے طُوفان کا شور

اُس کی دھڑکنیں سُن لیتی ہیں

اور وہ اپنے حسین وجوُد کے

گرم موسموں سے سفر کرتا

میری آنکھوں کے سِتاروں میں

جب گُم ہو جاتا ہے تو

….مُجھے اپنا آپ نظر نہیں آتا

آج ایسے بے شُمار لمحے

اور اُن کے ماتھے پہ سجتے

میری تقدیر کے سہارے جِنہیں

چُھوئیں تو بنیں شبنم

پا لیں تو سمندر اور اِن

سِلسلوں میں جگتے وہ

خوشگوار پَل جن کی قسمت سے

روشن ہوتے اُجا لے اور

دیکھتے ہی دیکھتے جب وہ

سویرے جگمگا ئیں تو

….مُجھے اپنا آپ نظر نہیں آتا

جِن قدموں میں زندگی دم

توڑتی نظر آۓ تو لازم ہے

بندگی سجدوں میں ادا ہو

تب میری شناخت اُس میں ایسے

رَچ جاۓ جیسے شمعٰ میں آنچ

اور عشق کی سیڑھی چڑھتے چڑھتے

بُلند جب ہونے لگتی ہوُں تب

…..مُجھے اپنا آپ نظر نہیں آتا

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s