آزمائِش

image

بےخُودی کاساماں پِھر سےبنی جاتی ہُوں

آئینۂِ ساز پِھر سے دلِ آزمانے کو ہے

قدموں کی دُھول میں سراب لِپٹے ہے گرچہ

لِباسِ مجاز پِھر سے مَیّت دفنانے کو ہے

اندھیرأِ گُمنام میں پیوست ہے شَبِ نَو

مَرضِ عاشِقی پِھر سے رُوح جگانے کو ہے

سفینۂِ آرزؤِ خام کو کنارہ مل جاۓ اگر

کاتبِ تقدیر پِھر سے ذات ڈُوبانے کو ہے

جی جلانےکے ہیں طریق و قواعد بےشُمار

پروانۂِ شمعٰ پِھر سے آگ سُلگانے کو ہے

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s