وصلِ نَو

image

مُدّتوں بعد چاند کِھلا ہے جسمِ فَلک پر

چاندنی شوخ سےشوخ تر ہوتی چلی جارہی ہے

برسوں میں جو شاداب ہُوا ہے دِیارِ گُلستان

مہک خُوب سے خُوب تر ہوتی چلی جا رہی ہے

صدی بِسری جس  لمحے وہ پل اب ٹھر گیا

گھڑی طویل سے طویل تر ہوتی چلی جا رہی ہے

بعد عرصے کے رونقِ وصل نے لی ہے کروٹ

مُحبت قائم سے قائم تر ہوتی چلی جا رہی ہے

زمانوں بعد رُوحِ  شمعٰ  نکھرنے لگی ہے یوں

تاثیر گرم سے گرم تر ہوتی چلی جا رہی ہے

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s