نَزدیکِیاں

image

اِنتہأِ قُربت کی آگ

میں جلتے ہُوۓ اِن

نظروں کی شام سے

جب چراغاں ہوتا ہے

اور لَب سُرخ شام میں

جذب ہونے لگتے ہیں تب

چھلَک جاتی ہے سُرمئ

آنکھ جس کو چُومتے ہی

نِگاہِ یار کا ستارہ جس کے

سَبب سے اُکھڑتی سانسوں کا

…..جنون جوش مارنے لگتا ہے

ساغرِ حُسن کی ڈگمگاتی

چال جب نشِیلے پیمانوں کو

چُھولے تب پَلکوں سے ٹکراتی

چِلمن اُلجھتی ڈوروں کو کھولنے

لگتی ہے اور دھیمی سرگوشی

روح میں اُتر جاتی ہے پھر یُوں گیِلی

موم کی مِہک  سے نوخیز کلیوں کا

…..جنون جوش مارنے لگتا ہے

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s