..مُمکن نہیں

image

وہ جام ہے جس کے لَب کو

چھُوتے ہی بھر جاتے ہیں

راستے سبھی جن کے سبب

سے تڑپتی سانسیں پیاس

کی تلاش میں سمندر کا

رُخ کریں بھی تو باوجُود

…ڈوبنے کے ڈُوب نہیں سکتیں

کُچھ بہکتے لمحوں کے مخمور

تصوّرات  ٹھہر گۓ ہیں پلکوں

کی قطاروں پر جن کی دھڑکن

ایسے شور کو جگاتی ہے جس

میں پِگھل کے شبنمی آنچ باوجُود

…بُجھنے کے بُجھ نہیں سکتی

جس تپِش کی گردش میں

سُلگ رہا ہے بدن ایسے کہ

رُوح مُکمّل بھی نہیں اور

ادھُوری بھی نہیں تب بڑھتے

گھَٹتے جذبات میں بہتے

شراروں کی شوخیاں باوجُود

…تَھمنے کے تَھم نہیں سکتیں

 

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s