ہِچکَچاہٹ

image

بِھیگی رُتوں کے سُوکھے خواب ٹھہر گۓ ہوں جیسے

شَجر کی ڈالیِوں سے جھڑتے ہیں پیوستِ خاک ہونے کو

جَھرنوں سے بِہتے پانی کی رفتار میں جِھجَک سی ہے

دریا کی انگڑائیوں سے مچلتے ہیں سپُردِ موج ہونے کو

شَمس کی مُسکراہٹ اُلفت کو چُھپا رہی ہو پھر بھی

اُفق کی چادروں سے جھانکتے ہیں قوسِ قزح ہونے کو

شراروں کی پِھیکی کِرنوں میں شوخی اِنتہا کی ہے

شمعٰ کی رعنائیوں سے ٹَپکتے ہیں جازبِ راکھ ہونے کو

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s