…اِسی اِنتظار میں

image

دیکھ رہے ہو تُم ہر لمحہ مُجھے محفل ہو یا تنہائی

جُدا ہوُۓ ہم ٹھہری رہی نظر آنکھوں میں جذب ہو کر

عالمِ وصل پہ نہ کوئی اِختیار نہ جور و جفاکی بندش

بدن جُدا ہُوۓ رُوح گُھل گئی سانسوں میں جذب ہو کر

نگاہِ شوق کی عِنایت سے ہُوۓ میرےجان و تن فروزاں

اندھیراسوۓ چاندنی اُترنےلگی دھڑکنوں میں جذب ہوکر

خائِف ہوتا ہے دل ہِجر کی آزمائش سے جب بھی گُزرے

لمحہ غرُوب ہُوا جاگ اُٹھی قُربت کرنوں میں جذب ہو کر

احساسِ دُوری کی کسک نے دلاۓ ہیں یاد نشِیلے پَل

لَب خُشک ہُوۓ اور بھیگتے گۓ آہوں میں جذب ہو کر

One thought on “…اِسی اِنتظار میں

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s