کرم پَرور

image

یہ میرے شعر نہیں سجدے

ہیں اُس خُدا کو جس نے عشق

کے آسمان میں نوازا ہےمُجھے

…مُحبّت کی رحمتوں سے

یہ میری نظمیں نہیں سلام

ہے اُس پیکر کو جس نے بندگی

کے جہاں میں بخشا ہے مُجھے

…سرُور کی آشنائیوں سے

یہ میری تحریریں نہیں خط ہیں

اُس حسِین کو جس نےاُلفت

کے گُلستان میں سجایا ہے مُجھے

…پُھولوں کی شوخیوں سے

یہ میری غزلیں نہیں اِنعام ہیں

اُس پرِستار کو جس نے عقیدت

کے جہاں میں تراشا ہےمُجھے

…پتھر کی لکیروں سے

One thought on “کرم پَرور

  1. جبیں سجدہ کرتے ہی کرتے گئی
    حقِ بندگی ، ہم ادا کر چلے؟

    پرستش کی یاں تک کہ اے بُت تجھے
    نظر میں ، سبھوں کی ، خدا کر چلے

    نہ دیکھا غمِ دوستاں شکر ہے
    ہمیں داغ اپنا دکھا کر چلے

    Liked by 1 person

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s