حَسرت

image

رات بھر تارے جگتے رہیں

اور صُبح کی نیند پُوری نہ ہو

نظروں میں جُگنو جلتے رہیں

اور روشن کبھی سیاہی نہ ہو

بارش ٹُوٹ کے برستی جاۓ

اور دھُوپ کی آنچ سُنہری نہ ہو

ارماں میں ڈُوبتا جاۓ سمندر

اور پیاس کی حد تھمی نہ ہو

لَب کے پیالے سیراب رہیں

اور شبنمی کَلی پھِیکی نہ ہو

گُلوں میں رنگ خوب سجیں

اور شاخوں کی رَگ ہری نہ ہو

ریشم سے پِگھلے موم سابدن

اور شمعٰ کی لَو دھیمی نہ ہو

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s