نَقش

image

وہ نہیں آسکا تو کیا ہُوا

خوُشبو میرے ساتھ آئی ہے

اُس کی یاد میں چلتے چلتے

نئی عادت رنگ لے آئی ہے

ستارہ آنکھ کے جلوے نے

پیاس میری اور بڑھائی ہے

پَلٹتےہی اوجھل ہوئی دھُوپ

وہ کِرن جس نے بُجھائی ہے

دےگیاجس پَل کاموقع مُجھے

سوغات میرے حِصّے آئی ہے

چُھپنے لگی ہوں اُس قدم میں

لہر اُس نِشاں میں نہائی ہے

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s