آدھا سُکھ

image

منزل تَک رسائی نہ سہی تو شکوہ نہیں

سفر کو ہی منزل بنا لِیا ہے میں نے

آدھا سُکھ ہو یا پُورے غم کی چھاؤں

تپِش سے ہی جسم جلا لِیا ہے میں نے

اُس دل سےچین کی آشنائی وابستہ ہے

سرُورکو ہی خوُن میں اُتار لِیاہےمیں نے

بارش کی بُوندوں سے تَر ہوتی نہیں ذات

اَشک سے ہی خُود کو بِھگا لِیا ہے میں نے

عشق آزمائش ہے مِلے جُلے سِلسلوں کی

جنون کو ہی رُوح میں بسا لِیا ہے میں نے

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s