..مُنفرد ہُوں

image

الگ ہُوں سمجھ کر دیکھو تو سہی

اِس جہاں سے آگے چل سکو گے لیکن؟

سایہ مُجھ سے ناراض ہو بھی جاۓ اگر

اِس کڑی دھُوپ سے بچ سکو گے لیکن؟

عشق قیامت کی صُورت میں حاوی ہے

اِس اِنتہا کو پار کر سکو گے لیکن؟

مُجھے اِلزام دیتی ہےغفلت میں چُوردُنیا

اِس جاہلیّت سے جان چھُڑا سکو گےلیکن؟

مُحبّت کے طُوفان میں جل رہی ہُوں دیکھو

اِس تلاطُم کو برداشت کر سکو گے لیکن؟

بے پرواہی کی عادت نے ڈبویا ہےمُجھے

اِس تباہی سے خود کو نکال سکو گےلیکن؟

دوغلی دُنیا کے پھیکے رسم و رواج ہیں

اِس مُنافقت سے دل لگا سکو گے لیکن؟

میرے جنون کےدامن پُر سرُورہیں

اِس راحت میں گھر بنا سکو گے لیکن؟

بے بسی کی آگ میں جلے ہے ہستی میری

اِس چنگاری کی ہوَس بُجھا سکو گے لیکن؟

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s