تَضاد

image

زیبِ ہستی ہے نایاب مُحبّت کا موتی

..پتھّر بنتا ہےہَوس کی لَو میں بِہتے ہی

پوشیدہ ہے خزانہ حُسنِ دل میں

..خس وخاشاک بنتا ہےغرُور کی چاہ میں مِٹتے ہی

نِکھرتا ہے رُوحِ جہاں میں شفاف بادل

..غُبار بنتا ہے نفس کی آڑ میں چُھپتے ہی

عشق تختِ عرش کا قیمتی تاج ہے

..جابر بنتا ہے سنگ دِلی کی آگ میں جلتے ہی

محفلِ نظر کا ہِیرا ہے چمکتا ستارہ

..شُعلہ بنتا ہے سیاہی کی راکھ میں پَلتے ہی

ظَرف سجدہ گر ہے شجرِ گُل کو

..مُردار بنتا ہے فتُور کی مِٹّی میں دَبتے ہی

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s