داغ

image

مرہم وقت میں نہیں اَشکوں میں دُھلتے ہیں

داغ صدیوں میں نہیں ایک پَل میں بَنتے ہیں

زخم گِہرا ہو تو خطرۂِ جاں کا دھڑکا رہتا ہے

خونِ دل سے ٹپکتےآنسُو پلَک سے موتی چُنتے ہیں

نشانِ خنجر سے جو بَنتے ہیں پھُول بُوٹے بدن پہ

وہ رُوح کے زاویوں تک پُہنچنے کا اثر رکھتے ہیں

درد و کسک کے عالم میں تِیر گُل کا کام کرتے ہیں

یہ کانٹوں کے موسم میں بھی بہار کی راہ تَکتے ہیں

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s