دل بہار یادیں

IMG_1639

کہِیں تُمہیں وہ نظر تو یاد

نہیں آتی جس کی مستی

چُوما کرتی تھی تُمہیں

وصل کی بہاروں میں؟

کہیِں تُمہاری دھڑکن کا

جی چُراتی تو نہیں وہ نبض

جس کو چھُوا تھا تم نے

وصل کی بہاروں میں؟

کہِیں اُن ہاتھوں کی حِدّت

بہکاتی تو نہیں تُمہاری تڑپ

تھاما تھا جس نے تمہیں

وصل کی بہاروں میں؟

کہِیں تمہیں اُس آغوش کی مِہک

بُلاتی تو نہیں جس کی خوُشبو

میں بھُلایا تھا تم نے خُود کو

وصل کی بہاروں میں؟

 

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s