اِشتیاقِ اُنس

IMG_1646

جلتے ہیں دِیۓ چراغاں میں جیسے اکثر

خُدا کرے ہتھیلی پہ مجھے بھی جلاۓ کوئی

آئینے میں جس طرح سما جاتا ہے چاند

خُدا کرے دیکھ کہ مجھے بھی شرماۓ کوئی

ٹکرا کے جب نظر پُہنچے مقام پر اپنے

خُدا کرے منزل پہ مجھے بھی مِل جاۓ کوئی

خواب لیتے ہیں انگڑائی جیسے کروٹوں میں

خُدا کرے حقیقت میں مجھے بھی جگاۓ کوئی

شمعٰ کے رنگ کرتے ہیں بے بس جس طرح

خُدا کرے آرزو میں مجھے بھی نِہلاۓ کوئی

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s