بےاَثرگُلاب

IMG_1659

میں حسین ہوتی اگر تو

وہ بھُول جاتا کہ صبر

کی شاخ پہ بے خُودی

…کیسے دستک دیتی ہے

میں ہوتی اگر پری تو

وہ بھُول جاتا کہ کہانی

کیسے حقیقت کے پردے

…فاش کرتی ہے

میں چاندنی ہوتی اگر تو

وہ بھُول جاتا کہ عکس

میں کیسے رات

…جھانکا کرتی ہے

میں ہوتی گر پُرکشِش تو

وہ بھُول جاتا کہ گُناہ کی

سرحد کس راستے لے جا کے

…دَم توڑتی ہے

میں ساحرہ اگر ہوتی تو

وہ بھُول جاتا کہ بس میں

کرتی جان کیسے منتر

…پڑھا کرتی ہے

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s