نظراَنداز پَل

IMG_1666

اِن وقت کے تقاضوں میں کہِیں

کھو گیا ہے پَل شاید

چُور ہے دل مجبوری سے

…جانے پھر مجبوری کیا ہے

طویل سفر کی مُسافتوں میں

بھٹک گۓ ہیں مُسافر شاید

منزل مِلے یہ ضروری تو نہیں

…جانے پھر ضروری کیا ہے

اِنتہا ہے درد اور انجان صنم

نظر انداز کرے بھی تو کیا گِلہ

مانے نہ ہَوا جب وہ اِشارے

…جانے پھر منظوُری کیا ہے

جلتی ہے یاد ہتھیلی پہ یُوں

تھک گئی ہے رقص کرتے کرتے

تھِرکیں تو ڈگمگائیں قدم

…جانے پھر کمزوری کیا ہے

قسم ہے اُس دل کی دھڑکن کی

جُدائی نے کر دیا ہے اور تنہا

رنج میں سرُور کا ہےعالم شامل

…جانے پھر زُودرنجی کیا ہے

 

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s