اَنا

IMG_1693

قدر نہیں جہاں میں جس کو ہمدرد و پیارکی

تنہا ہی رِہ جاۓ گا اَنا کے لحاف میں لپٹ کر

کرے نا انصافی سمجھ کر اِنصاف ستم گر

گُناہ گارہی مَر جاۓ گا اَنا کے ریشم میں سِمٹ کر

بیدار کیوں کرتے ہو مُردوں کو اے زِیست پسندو

دَبتا ہی رِہ جاۓ گا اَنا کے کفن میں لپٹ کر

ہر دل عزیز ہے تکبّرِ عروج کا میرے رقیب کو

ہاتھ مَلتا ہی رِہ جاۓ گا اَنا کے رنگ میں سِمٹ کر

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s