نۓ سِلسلے

AA82E5DC-9D78-4FBE-B575-92323E924C2A

کیا ہُوا جو آج پھر صُبح ویسی نہیں نِکلی

نئی کِرنوں میں چمک میں ڈھونڈ لُوں گی

بُہت رو لِیا پراۓ درد کے غموں میں بِہہ کر

نئی خوشیوں میں ترنگ  میں ڈھونڈ لُوں گی

نہ رُکی ہے زندگی نہ ہی پَل پھیکے رہیں گے

نۓ راستوں میں پھر وہی منزل ڈھونڈ لُوں گی

شمعٰ کا کام ہے جلنا اور پھیلانا روشنی

نۓ آنسوؤں میں پگھلنا میں ڈھونڈ لُوں گی

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s