ہستئِ گرہن

Underwater Maiden

کئی رنگوں میں شام گُزاری ہے میں نے

اور دھُوپ میں کرنوں کا عکس چھُوا ہے

اِجازت نہ تھی جس برسات میں بھیگنے کی

اُس ٹھنڈی تاپ کی بارش کو پِیا ہے

گۓ دن تک سہا جن دَردوں کو میں نے

اُسی چُبھن میں مر کر جیا ہے

تِنکا تِنکا ٹُوٹ گیا تھا جھونکے سے جو

نۓ آشیاں پہ پھر بسیرا کیا ہے

ڈوب کے جس طرح نِکلی ہُوں سمندر سے

اُس گرہن سے اِک موقع اُدھار لِیا ہے

 

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s