خیالِ دِلکشی

image

تُمہیں سوچیں تو مُسکرانے لگتے ہیں یہ لَب

اِس خیالِ جنّت سے نہ کوئی نکالے اب ہمیں

تُمہیں دیکھیں تو چمکنے لگتی ہیں یہ آنکھیں

اِس مِحفلِ کہکشاں سےنہ کوئی نکالےاب ہمیں

تُمہیں پا کےیوں بےاختیار اِترانےلگتا ہےیہ دل

اِس نازِ خوُد پسندی سے نہ کوئی نکالےاب ہمیں

تُمہیں چھُو لیں تو پگھلنے لگتے ہیں یہ جان و تن

اِس لمسِ خوشبو  سے نہ کوئی نکالے اب ہمیں

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s