دل اَفروز

image

ہاۓ وہ خوُشبو میں لِپٹے ہاتھ

میری ہستی کو فنا کر چلے

وہ پناہوں کے مظبُوط جھرونکے

پِھر سے ارماں جگا کر چلے

چمکتی زنجیروں کے قید خانے

دل کے پنجرے کو اُڑا کر چلے

اُف وہ آئینے سےشفاف ساۓ

پِھر سے میری رُوح چُرا کرچلے

اَن کہےالفاظ کہہ گۓ اِشاروں میں

وہ اِک نئی پیاس کو بڑھاکرچلے

رُوٹھےجذبات کی راکھ اُڑتی گئی

شمعٰ کی موم کو پِگھلا کر چلے

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s