..فَناہوتےگۓ

image

کانپ جاتی ہے ذات

اُس کسک کی حرارت

میں گُھل کے تب جسم

نہیں جانتا کہ رُوح

…کس کی ہے

لرَزتے ہاتھوں سے پِھسلتی

جان گواہ ہے اُس دُھوپ

کی جس میں جل کے سورج

نہیں جانتا کہ تاثیِر

…کس کی ہے

کانپتے احساس کی سرد حِدّت

میں سِمٹا وہ پل جس کو چَکھ

کے زائِقہ نہیں جانتا کہ مِٹھاس

…کس کی ہے

لَرزتے ہونٹوں کی پیاس چُھوتی

رہی کنارے اُس پیمانے کے جس

کےنشے میں غرق ہو کر دل

نہیں جانتا کہ دھڑکن

…کس کی ہے

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s