جلتے بُجھتے

IMG_1634

وصل میں دیتے ہیں آنسُو نئی راحت

ہِجر میں خُوشی جو مِلے سوغات ہے

شفق کرتی ہے چاک سِینہ بادل کا

شُعاع میں بارش جو مِلے سوغات ہے

پڑتی ہیں نظریں خنجر کی رفتار سے

قُربت میں فاصلہ جو مِلے سوغات ہے

خِزاں میں شجر مُسکرانے لگا ہے

پت جھڑ میں بہار جو مِلے سوغات ہے

اُس کی سنگت میں تِشنگی کی شِدّت

صِحرا میں سمندر جو مِلے سوغات ہے

کھِلتے ہیں پھُول کانٹوں کی بانہوں میں

زخم میں کسک جو مِلے سوغات ہے

شمعٰ پِگھلنے لگی مزار پہ عشق کے

انجام میں اِعزاز جو مِلے سوغات ہے

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s