فریبِ نظر

2679C787-5181-4C11-8D77-148B912431C7.jpeg

اُسے پسند ہے یادوں کی ڈور سے پتنگ اُڑانا

جبکہ میں یاد بناتی ہُوں آج کے رنگوں سے

یقین ہے کہ چاہتا ہے ٹُوٹ کر کوئی اُسے

جبکہ دُور ہو گئی ہے یہ خوشی میرے نصیب سے

کئی خواب ہیں سجانے اُسے بس ایک میرے سِوا

جبکہ میں ہر آرزُو سنوارتی ہُوں اُس کے خیال سے

اُسے دُکھ ہے کہ کیا ہوگا اِس بے نام سی دُنیا کا

جبکہ انجان ہے وہ اپنے ہی دِل کی کیفیّت سے

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s