بز مِ شمعٰ

image

 

 

 

چا ند رات سہا نی تھی ، محبّت جب دیو انی تھی

پِہروں سر اب میں جلتے رہنا ، شا میں وہ مستا نی تھیں

خشبوُ چندن لمس اور پایل ، عِشقیہ آتش سُلگا نی تھی

شمعٰ دِھیمے جلتے رہ گئ ، صُبح تو آخر آنی تھی